سیاسی خانہ بدوش کون؟

اسلام آباد ...مسلم لیگ (ن) کی ترجمان وسابق وزیر اطلاعات مریم اورنگزیب نے کہا کہ حکومتی رویئے سے پارلیمنٹ کا سیشن ایک دن بھی پوری طرح نہیں چل سکا۔وزیر اطلاعات سیاسی خانہ بدوش ہیں۔ان کی کوئی پارٹی ہے نہ نظریہ، اسی لئے وہ پارلیمانی روایات اور اقدار سے ناواقف ہیں۔چور چور کے نعرے لگا کرسستی شہرت تو حاصل کی جا سکتی ہے لیکن اپنی نااہلی نہیں چھپائی جا سکتی۔وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری کے بیان پر ردعمل میں مریم اورنگزیب نے کہا کہ پہلی مرتبہ یہ ہوا ہے کہ حکومت نے اپنے ہی طلب کردہ اجلاس میں کورم کی نشاندہی کی ہو ۔انہوں نے کہاکہ سیاسی خانہ بدوشوں کی نااہل حکومت مخالفین کے گریباں پکڑنے کی کوشش کرتی ہے۔ یہ اپنے گریباں میں جھانکیں۔یہ پکے چور ، عادی جھوٹے اور نامزد ملزمان ہیں۔ انہوں نے کہاکہ آپ چور چور کا شور مچائیں لیکن آپ سے سوال ہوگا کہ غریب عوام پر تاریخی مہنگائی کا بم کیوں گرایاگیا؟۔ انہوں نے کہاکہ چور چور کے نعرے لگا کرسستی شہرت تو حاصل کی جا سکتی ہے۔ اپنی نااہلی نہیں چھپائی جا سکتی۔ مریم اورنگزیب نے کہاکہ حکومت کے پاس کسی معاملے میں بھی کوئی حکمت عملی ہے اور نہ وژن ہے۔ انہوں نے کہا کہ آپ سے پوچھا جائےگا بتائیں آپ سے این آر او کب اور کس ے مانگا؟۔ انہوں نے کہاکہ حکومتی نااہلی اور منفی رویہ سے موجودہ حکومت کو جلد عوام سے این آر او لے کر بھاگناپڑے گا۔ انہوں نے کہاک ہ آپ سے پوچھا جائے گا کہ بھیک مانگ کر پوری دنیا میں پاکستان کی جگ ہنسائی کیوں کرائی؟ڈی پی او پاکپتن کے ساتھ کیا ہوا؟ ۔ انہوں نے کہاکہ آپ سے پوچھا جائے گا کہ پنجاب اور اسلام آباد کے آئی جیز کے ساتھ کیا ہوا؟،آپ کے وزراء ایس ایچ اوز کی کرسیوں پر بیٹھ کر احکامات کیسے لکھتے ہیں؟۔ انہوں نے کہا کہ 50 لاکھ گھروں کا وعدہ کر کے غریبوں سے 14لاکھ روپے کی رقم پیشگی کیوں مانگی جا رہی ہے؟ ایک کروڑ نوکریاں کہاں ہیں؟آپ کے 100دن کی کارکردگی جھوٹ نااہلی اور یو ٹرن کی سنچری ہے۔ انہوں نے کہا کہ پشاور میٹرو کا منصوبہ 80ارب روپے خرچ ہونے کے بعد بھی کھڈوں کا منصوبہ کیوں ہے؟ ۔ بتایا جائے کہ خیبر پختونخوا احتساب کمیشن کے بعد پبلک اکاو¿نٹس کمیٹی کو تالا لگا کر حکومتی احتساب کے عمل کو کیوں روکا جا رہا ہے؟۔

شیئر: