تیل پیدا وار میں کمی کیلئے اوپیک کو امریکہ سے اجازت کی ضرورت نہیں، الفالح

ویانا۔۔۔ سعودی وزیر توانائی خالد الفالح نے کہا ہے کہ  ابھی تک تیل  پیداوار میں کمی کا کوئی سمجھوتہ نہیں ہوا ہے۔ تیل کے موجودہ  نرخ تسلی بخش ہیں۔  تیل منڈی  کو  کسی طرح کا جھٹکا نہیں دینا چاہتے۔   وہ  ان  اطلاعات پر  تبصرہ کررہے  تھے  جن میں دعویٰ کیا جارہا ہے کہ  اوپیک  ممالک  یومیہ 10 لاکھ  بیرل تیل کم کرنے کا فیصلہ کرچکے ہیں۔  اس پر تبصرہ کرتے ہوئے الفالح نے کہا کہ تیل  پیداوار میں کمی کا کوئی بھی فیصلہ  اوپیک سے  باہر تیل پیدا کرنے والے ممالک کی  شرکت کے بغیر نہیں ہوگا۔    الفالح نے ویانا اجلاس سے قبل  امریکی صدر ٹرمپ کے ٹوئٹ پر بھی تبصرہ کیا۔  ٹرمپ نے کہا تھا کہ  امید ہے کہ  اوپیک ممالک کسی پابندی کے  بغیر  تیل کی   پیداوار  اتنی ہی رکھیں گے جتنی کے اب ہے۔  دنیا  تیل کے  نرخوں میں  نہ  اضافہ چاہتی ہے  اور نہ اسے  اس کی  کوئی ضرورت ہے۔   انہوں نے  یہ بھی تحریر کیا کہ تیل کے  عالمی نرخ  سستے  رکھنے ضروری ہیں۔   الفالح نے  اس پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ  اوپیک کو  تیل پیداوار میں کمی کیلئے امریکہ سے اجازت لینے کی کوئی ضرورت نہیں۔  امریکہ اس پوزیشن میں نہیں کہ  وہ  اوپیک ممالک  پر اپنا  فیصلہ تھوپے۔  ہمیں کیا کرنا ہے  اور کیا نہیں کرنا،  وہ  اوپیک کو  اس سلسلے میں  ہدایت دینے کی پوزیشن میں نہیں۔  الفالح نے بتایا کہ  اوپیک ممالک  تیل منڈی میں توازن بحال کرنے کیلئے  تیل پیداوار  میں معقول کمی  کا ذہن بنائے ہوئے ہیں۔  

شیئر: