غیر ملکی انجینیئرپیشہ تبدیل نہیں کرسکتا

ریاض ۔۔۔ وزارت محنت و سماجی بہبود اور سعودی انجینیئرز کونسل نے متفقہ فیصلہ کیا ہے کہ سعودی عرب پہنچنے کے بعد کسی بھی غیر ملکی کو اپنا پیشہ انجینیئر میں تبدیل کرنے کی اجازت نہیں ہوگی۔5برس سے کم پیشہ ورانہ تجربہ رکھنے والے انجینیئرز کی سعودی عرب درآمد بند کردی گئی۔یہ فیصلہ انجینیئرز کونسل کے چیئرمین سعد الشہرانی اور وزیر محنت و سماجی بہبود احمد الراجحی نے ریاض میں وزارت محنت کے دفتر میں میٹنگ کے دورا ن کیا۔الشہرانی نے بتایا کہ نجی اور سرکاری کمپنیوں کے اشتراک سے انجینیئرز کےلئے روزگار ورکشاپ کیا جائیگا۔ اس موقع پر کمپنیوں کو کتنے اور کیسے انجینیئرز چاہئیں اس کا بھی جائزہ لیا جائیگا۔ انجینیئرز کی اسامیوں کی سعودائزیشن کی پالیسی پر بھی غوروخوض ہوگا۔ الشہرانی نے بتایا کہ غیر ملکیوں کو انجینیئر کا پیشہ تبدیل کرنے پر عائد پابندی کی نگراں کمیٹی بھی قائم کردی گئی ہے۔ یہ سیکریٹری محنت برائے سعودائزیشن ، وزارت کے متعدد نمائندوں اورانجینیئرز کونسل کے چیئرمین پر مشتمل ہے۔ الشہرانی نے یہ بھی بتایا کہ تعمیرات کے شعبے میں سعودائزیشن کو یقینی بنانے کیلئے اس امر کی تاکید کی گئی ہے کہ کنسلٹنسی اور انجینیئرنگ کے ہر ٹھیکیدار کو 10فیصد سعودی انجینیئر تعینات کرنے کا پابند بنایا جائیگا۔ ایک اور تجویر زیر غور ہے، وہ یہ ہے کہ10میں سے 5فیصد غیر تجربہ کار نئے سعودی انجینیئر تعینات کرنے کا ٹھیکیدار کو پابند بنایا جائے۔
 

شیئر: