مجھ سے بہتر تلاش کرتا ہے

عدنان افضال
 دلِ مضطر تلاش کرتا ہے
خود سا خود سر تلاش کرتا ہے
کیا عجب شخص ہے مجھے پا کر
مجھ سے بہتر تلاش کرتا ہے
تم وہی ہو نا، جس کی آنکھوں کو
کوئی منظر تلاش کرتا ہے
میں نے جس کو کبھی تراشا تھا
وہ مرا سر تلاش کرتا ہے
میں تو آنکھوں میں ڈوب جاو¿ں گا
کیوں سمندر تلاش کرتا ہے

 
   

شیئر: