Sorry, you need to enable JavaScript to visit this website.

اضاحی پروجیکٹ کے تحت قربانی کا گوشت مصر اور فلسطین میں تقسیم

’25 ہزار جانوروں کا گوشت مصر اور 30 ہزار جانوروں کا گوشت فلسطین کے حوالے کیا گیا‘ ( فوٹو: سبق)
اضاحی پروجیکٹ کے تحت قربانی کے گوشت کا مقررہ کوٹہ مصر اور فلسطین میں تقسیم کیا گیا ہے۔
عاجل ویب سائٹ کے مطابق طے شدہ کوٹے کے حساب سے 25 ہزار جانوروں کا گوشت مصر اور 30 ہزار جانوروں کا گوشت فلسطین کے حوالے کیا گیا ہے۔
اضاحی پروجیکٹ کی طرف سے مصر میں سعودی سفیر اسامہ بن احمد نقلی  نے گوشت حوالے کرنے کی تقریب میں شرکت کی جبکہ اس موقع پر مصری حکومت کے نمائندے محمد رضا اور قاہرہ میں فلسطین کے سفیر دیاب اللوح بھی موجود تھے۔
اس موقع پر سعودی سفیر اسامہ بن احمد النقلی نے کہا ہے کہ ’سعودی عرب نے قربانی کے گوشت سے فائدہ اٹھانے کے لیے نہ صرف اندرون ملک تقسیم کا انتظار کر رکھا ہے بلکہ دنیا بھر کے 25 ممالک میں بھی گوشت تقسیم ہوتا ہے‘۔
واضح رہے سعودی حکومت نے قربانی کے گوشت کو دنیا بھر کے ممالک میں بھی تقسیم کرنے کے لیے ’اضاحی پروجیکٹ‘ پر کام کر رہی ہے جو برسوں سے حج کے دوران کی گئی قربانی کے گوشت کو مختلف مسلم ممالک کے ضرورت مند لوگوں تک پہنچایا جاتا ہے۔

’سعودی حکومت نے قربانی کے گوشت کو دنیا بھر کے ممالک میں بھی تقسیم کرنے کے لیے ’اضاحی پروجیکٹ‘ پر کام کر رہی ہے‘ ( فوٹو: الریاض)

قربانی کا گوشت افغانستان، بنگلہ دیش، برکینا فاسو، چاڈ، کوموروس، جبوتی، مصر، ایتھوپیا، گیمبیا، گھانا، گنی، گنی بساؤ، انڈیا، انڈونیشیا، کینیا، لبنان، مالی، موریطانیہ، مراکش، نائجریا، پاکستان، سینیگال، صومالیہ، سوڈان اور دیگر ممالک شامل ہیں۔
اس پراجیکٹ کی نگرانی اسلامی ترقیاتی بینک کرتا ہے۔ گوشت تیار کرنے کا سارا عمل مشینی ہے۔
 بیرونِ ملک بھیجنے سے پہلے گوشت کو پروسیس کرکے پیک کیا جاتا ہے۔ اس کے بعد گوشت کو منجمد کر کے دیگر مسلم ممالک میں بھیج دیا جاتا ہے جہاں پر اس کو غربا اور مساکین میں مختلف تنظیموں کے ذریعے تقسیم کیا جاتا ہے۔

شیئر: