طالبان رہنماﺅں پر سفری پابندیاں ختم کرنے پر اتفاق

واشنگٹن۔۔۔ امریکہ اور روس نے اقوام متحدہ کی جانب سے طالبان رہنماﺅں پر لگائی گئی سفری پابندیوں کو ختم کرنے کے آپشن پر اتفاق کیا ہے تاکہ وہ افغان امن مذاکرات میں شرکت کرسکیں۔امریکہ کی جانب سے افغان امن مذاکرات کےلئے نامزد خصوصی مشیر زلمے خلیل زاد نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر کیا کہ اس معاملے پر میں نے انقرہ میں روسی ہم منصب ضمیر کابیلوف سے بات چیت کی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہم نے اتفاق کیا کہ افغان امن مذاکرات کی کامیابی کےلئے جو بھی ضروری ہو، اس پر عمل کیا جائے۔ اقوام متحدہ کی جانب سے طالبان رہنماﺅں پر لگائی جانے والی سفر ی پابندیوں کو ختم کرنے کے آپشن پر غور کررہے ہیں تاکہ انہیں امن مذاکرات میں شامل ہونے میں آسانی پیدا کی جاسکے ۔ ٹوئٹس کے مطابق روسی اور امریکی مشیروں نے اس بات پر بھی اتفاق کیا کہ مزید پیشرفت کرتے ہوئے، افغانی متحد، باہمی اور قومی مذاکرات کی ٹیم کے نام کا اعلان کریںجن میں افغان حکومت اور دیگر افغانی شامل ہوں۔ دونوں ممالک کے مشیروں نے اس بات پر بھی اتفاق کیا کہ افغانستان کے حوالے سے ہونے والے کسی بھی حتمی معاہدے میں اس بات کی ضمانت دی جائےگی کہ افغانستان کی زمین کبھی بھی کسی بھی ملک کے خلاف بین الاقوامی دہشت گرد تنظیموں کو استعمال کرنے کی اجازت نہیں دی جائےگی۔زلمے خلیل زاد نے کہاکہ مذاکرات میں امن کیلئے کوششیں اور خرابی کو روکنے کیلئے ایک ممکنہ علاقائی فریم ورک پر توجہ دینے کی ضرورت ہے۔
 

شیئر: