کرکٹر ناصر جمشید کا نام ای سی ایل سے نکالنے کا حکم

 
لاہور ہائیکورٹ نے پی ایس ایل 2 کے اسپاٹ فکسنگ کیس میں سزا یافتہ پاکستانی کرکٹر ناصر جمشید کا نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ ( ای سی ایل) سے نکالنے کا حکم دے دیا ہے۔
 جسٹس ساجد محمود سیٹھی نے ناصر جمشید کا نام ای سی ایل میں ڈالنے کے خلاف دائر درخواست کی سماعت کی۔ این این آئی کے مطابق ڈپٹی اٹارنی جنرل نے عدالت کو بتایا کہ ایف آئی اے کی سفارش پر ناصر جمشید کا نام ای سی ایل میں ڈالا گیا ہے۔ ایف آئی اے کے وکیل نے اس موقع پر موقف اختیار کیا کہ ای سی ایل میں نام ڈالنا وزارت داخلہ کا اختیار ہے۔

 ناصر جمشید کی کوئی انکوائری ایف آئی اے کے پاس زیر التواءنہیں۔ درخواست گزار نے کہا کہ اسپاٹ فکسنگ میں سزاکے بعد نام ای سی ایل میں ڈال کر قانون کی خلاف ورزی کی گئی ہے۔ عدالت نے فریقین کا موقف سننے کے بعد ناصر جمشید کا نام ای سی ایل سے نکالنے کا حکم دےدیا۔یاد رہے کہ پاکستان سپر لیگ2 کے دوران اسپاٹ فکسنگ میں ناصر جمشید سمیت شرجیل خان، محمد عرفان اور خالد لطیف کے نام سامنے آئے تھے جنہیں بعدازاں معطل کیا گیا۔

پی سی بی کے اینٹی کرپشن ٹریبونل نے 17 اگست 2018 ءکو ناصر جمشید کے خلاف اسپاٹ فکسنگ کیس کا فیصلہ سناتے ہوئے ان پر کرکٹ کھیلنے پر 10 سال کی پابندی لگا دی تھی۔

شیئر: