آرامکو کمپنی نے جنوبی سعودی عرب میں تیل کے نئے وسیع ذخائر دریافت کرلئے

ریاض.... سعودی عرب میں ایک ارضیاتی سروے نے مملکت میں تیل کی دولت کے دنیا کے سب سے بڑے ذخیرے کا پتہ چلایا ہے۔جمعرات کو سعودی آئل کمپنی آرامکو کے سابق مشیر اور شاہ سعود یونیورسٹی میں ارضیات کے استاد پروفسیر ڈاکٹر عبدالعزیز نے اپنے بیان میں کہا کہ جنوبی سعودی عرب کی البطحاء گزرگاہ کے قریب وادی الرمہ اور وادی السھباءکے درمیان تیل کی دولت سے مالا مال اس علاقے کوبقعاءکہاجاتا ہے۔یہاں پر خام تیل کے ذخائر سے پتہ ملا ہے۔ یہ علاقہ تیل کے وسیع ذخائر کے اعتبار سے دنیا کا سب سے زرخیز مقام ہے جہاں تیل کے ذخائر کے حجم کا تخمینہ 4 ارب 40 کروڑ بیرل لگایا گیا ہے۔ڈاکٹر عبدالعزیز کا کہنا تھا کہ تیل کے ذخائر سے مالا مال اس خطے کے مشرق میں جری العرب واقع ہے اور اسکے 3اطراف سے حدود وادی الرمہ،والاجردی اور باطن سے ملتی ہیں۔یہ تینوں وادیاں ایک دوسرے کےساتھ جڑی ہوئی ہیں۔ مجموعی طورپر ان تینوں وادیوں کو بھی وادی الرمہ کہا جاتا ہے اور اس کا رقہ 1200 مربع کلومیٹر ہے۔خلیج عرب کی شمالی سمت میں الزبیر شہر واقع ہے۔جنوب میں وادی السھبائ، مشرق میں الربع الخالی اور جنوب میں خلیج عرب واقع ہیں۔ سعودی ماہر ارضیات کا کہنا تھا کہ البقعاءتیل کے وسیع ذخائر کے اعتبار سے دنیا سب سے بڑا زرخیز علاقہ ہے۔یہاں پر نہ صرف تیل بلکہ گیس کے وسیع ذخائر کی موجودگی کا بھی انکشاف ہوچکا ہے۔یہ اب تک خشکی پر دریافت ہونے والی سب سے بڑی آئل فیلڈ ہے۔خشکی پر دوسری بڑی آئل فیلڈ کویت میں ہے جسے برقان کہا جاتا ہے۔خلیج میں تیل کی دولت سے مالا مال وادیوں کے درمیان گیس اور تیل کی 100 فیلڈ قائم ہیں جن میں زیادہ تر سعودی عرب کے اندر اور بعض دوسرے خلیجی ممالک میں ہیں۔
 

شیئر: