جڑواں بھائیوں کی لاشیں دریائے جمناسے برآمد ،مشتعل ہجوم کا ہنگامہ اور توڑ پھوڑ

باندہ۔۔۔  مدھیہ پردیش کے سگدرو پبلک اسکول سے جڑواں بچوں کو اغوا کے بعد قتل کرکے لاشیں دریائے جمنا میں پھینک دی گئیں۔بین الریاستی پولیس نے باہمی تعاون سے اغوا کاروں کو گرفتار کرلیا۔گزشتہ دنوں چترکوٹ کے سیتا پور کے رہائشی تیل کے تاجربرجیش راوت کےجڑواں بیٹوں پریانش اور شریانش کو 2موٹر سائیکل سواربدمعاشوں نے اسکول کے احاطے میں کھڑی بس سے اغوا کرلیا تھا۔اغوا کاروں نے انتہائی سفاکی کا مظاہرہ کرتے ہوئے بچوں کے ہاتھ پاؤں باندھ کریوپی کے باکل گاؤں سے گزرنے والے دریائے جمنا میں پھینک دیا تھا۔اغوا کی اطلاع ملنے کے بعد اتر پردیش اور مدھیہ پردیش پولیس کے علاوہ دونوں ریاستوں کی ایس ٹی ایف بھی بچوں کی تلاش میں سرگرداں رہی۔ایس او ذاکر حسین نے بتایا کہ چترکوٹ کے نامزد 4اغوا کاروں میں سے3کو گرفتار کیا گیا ۔ان کی نشاندہی پر دونوں  بھائیوں کی لاشیں برآمد کرلی گئیں۔لاشیں برآمد ہونے کے بعد چترکوٹ کے لوگوں میں غم و غصے کی لہر دوڑ گئی۔تاجروں کے مشتعل ہجوم نے جانکی کنڈ احاطے میں توڑ پھوڑ  اور پتھراؤشروع کردیاجس سے وہاں کھڑی متعدد گاڑیوں کے شیشے ٹوٹ گئے۔پولیس کی گاڑیوں کو بھی نشانہ بنایا گیا۔ پولیس نے لاٹھی چارج اور آنسو گیس کے گولے داغے۔ ایم پی اور یوپی کی پولیس نے کثیر تعداد میں موقع پر پہنچ کر حالات کنٹرول میں کیا۔
مزید پڑھیں:- - - -اردو میں ہدایات جاری نہ کرنے پر الہٰ آباد ہائیکورٹ نےیوپی حکومت سے جواب طلب کرلیا

شیئر: