غیر ملکیوں کو کاروبار کی مشروط سہولت

غیر ملکیوں کو تجارتی اداروں کا مالک بننے کے مواقع مہیا کیے جائیں گے۔ فائل فوٹو
وزارت تجارت و سرمایہ کاری سعودیوں کے نام سے غیر ملکیوں کے کاروبار کی بیخ کنی کے لیے مختلف اقدامات کررہی ہے۔ سعودی مارکیٹ کے مختلف شعبوں میں غیر قانونی تجارت کے خاتمے کے لیے نئی تجویز سامنے آئی ہے۔
مقامی اخبار الوطن کے مطابق سعودی وزارت تجارت سعودیوں کے نام سے غیر ملکیوں کے کاروبار کے خاتمے کے لیے غیر ملکیوں کو تجارتی اداروں کا مالک بننے کی مشروط سہولت فراہم کرنے کی تجویز پر غور کررہی ہے۔

 سعودیوں کے نام سے غیر ملکیوں کے کاروبار کے اسباب کا جائزہ لیا جارہا ہے۔ فائل فوٹو

غیر قانونی طریقے سے دولت کمانے اور اسے سعودی عرب سے باہر بھیجنے کے سدباب کے لیے وزارت تجارت نے نجی اداروں اور کمپنیوں پر یہ پابندی عائد کی ہے کہ وہ بینکوں کے ساتھ اپنا سارا لین دین ٹیکنیکل سسٹم کے ذریعے کریں۔ یہ پابندی اس لیے لگائی گئی ہے تاکہ نجی اداروں کی مالیاتی سرگرمیوں پر نظر رکھی جاسکے۔
وزارت تجارت کے ذرائع نے بتایا کہ سعودیوں کے نام سے غیر ملکیوں کے کاروبار کے اسباب کا جائزہ مختلف انداز سے لیا جارہا ہے۔ ماضی میں یہ جائزہ تمام اداروں کا یکساں انداز میں لیا جاتا تھا۔ اس مرتبہ حکمت عملی تبدیل کردی گئی ہے۔ اب ہر ادارے کا جائزہ الگ سے لیا جائے گا تاکہ اس ادارے میں قانون تجارت کی خلاف ورزیوں کو ٹھوس بنیادوں پر ختم کیا جاسکے۔

تمام تجارتی اداروں کو بینکوں سے جوڑا جائے گا۔ فائل فوٹو

وزارت تجارت نے عندیہ دیا ہے کہ سعودیو ں کے نام سے غیر ملکیوں کے کاروبار کا معاملہ سلجھانے کے لیے تین بنیادی اقدامات ہوں گے۔ ایک تو قانون سازی ہوگی۔ دوم تمام تجارتی اداروں کو بینکوں سے جوڑا جائے گا۔ تیسرا یہ کہ غیر ملکیوں کو تجارتی اداروں کا مالک بننے کے مواقع مہیا کیے جائیں گے۔
                        
خود کو اپ ڈیٹ رکھیں، واٹس ایپ گروپ جوائن کریں

شیئر: