بنگلہ دیش: روہنگیا مہاجرین کی کشتی ڈوبنے سے 14 ہلاک

میانمار میں فوجی کریک ڈاؤن سے بچنے کے لیے روہنگیا مسلمانوں نے جان بچانے کے لیے فرار اختیار کیا تھا۔ اے ایف پی
بنگلہ دیش میں حکام کا کہنا ہے کہ روہنگیا مہاجرین کی ایک کشتی ڈوبنے سے 14 افراد ہلاک ہو گئے ہیں جبکہ 70 دیگر کو بچا لیا گیا ہے۔
خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق حکام نے بتایا کہ منگل کی صبح روہنگیا مہاجرین کی ایک کشتی بنگلہ دیش کے جنوبی ساحل کے قریب ڈوبی۔
بنگلہ دیش کے کوسٹ گارڈ کمانڈر نعیم الحق نے اے ایف پی سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ’اب تک ہم نے 14 لاشیں نکالی ہیں جبکہ 70 افراد کو زندہ بچایا ہے۔‘
کوسٹ گارڈ کمانڈر کا کہنا تھا کہ نیوی اور کوسٹ گارڈ کی کشتیاں خلیج بنگال میں سینٹ مارٹن جزیرے کے قریب ڈوبنے والے افراد کی تلاش کر رہی ہیں۔
اے ایف پی کے مطابق سنہ 2017 میں میانمار میں فوجی کریک ڈاؤن سے بچنے کے لیے سات لاکھ سے زیادہ روہنگیا مسلمانوں نے جان بچانے کے لیے فرار اختیار کیا تھا۔
ان میں سے زیادہ تر نے بنگلہ دیشں کے مہاجر کیمپوں میں پناہ حاصل کی تھی مگر اب وہاں سے کشتیوں کے ذریعے ملائیشیا پہنچنے کی کوشش کرتے ہیں۔
بنگلہ دیش کے مہاجر کیمپوں میں روہنگیا مسلمانوں کو نامساعد حالات کا سامنا ہے۔
گذشتہ سال میانمار کی فوجی حکومت کے خلاف دو لاکھ روہنگیا مسلمانوں نے بنگلہ دیش کے مہاجر کیمپوں میں ریلی نکالی تھی۔ 

شیئر: