احمد شہزاد ٹیم پر بوجھ محسوس ہونے لگے

 
  لاہور: کرکٹ کے تینوں فارمیٹ میں سنچریاں بنانے کا اعزاز رکھنے والے واحد بیٹسمین احمد شہزاد کی پاکستانی ٹیم میں جگہ خطرات سے دوچارہوتی جارہی ہے۔گزشتہ سال اکتوبر میں سری لنکا کیخلاف دونوں ون ڈے میچز میں ناکامی پر ڈراپ کئے جانے کے بعد ان کا خلا امام الحق نے پرکردیا۔ آئی لینڈرز کیخلاف ٹی ٹوئنٹی سیریز کے بھی 2میچز کھلانے کے بعد احمد شہزاد کو باہر بٹھا دیا گیا، رواں سال جنوری میں نیوزی لینڈ کیخلاف ون ڈے سیریز کھیلنے والی ٹیم میں انھیں شامل نہیں کیا گیا اور ٹی ٹوئنٹی اسکواڈکا حصہ بنے تو44رنز کی ایک ہی قابل ذکر اننگزکھیل پائے۔ رواں سال اپریل میں ویسٹ انڈیز کیخلاف کراچی میں سیریز کے تینوں میچز میں بابر اعظم نے بطور اوپنر اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کیا اور احمد شہزاد باہر بیٹھ کر تالیاں بجاتے رہے۔ نوجوان بیٹسمین بابر اعظم انگلینڈ کیخلاف ٹیسٹ سیریز میں بازو کی ہڈی فریکچر ہونے کی وجہ سے وطن واپس آگئے تو احمد شہزاد کیلئے اسکاٹ لینڈ جانے کا راستہ کھل گیا۔اوپنر نے نوآموز بولنگ لائن کا سامنا کرتے ہوئے پہلے میچ میں 14اور دوسرے میں 24رنز بنائے۔ ون ڈے اسکواڈ سے پہلے ہی باہر احمد شہزاد کیلئے ٹی ٹوئنٹی فارمیٹ میں بھی جگہ برقرار رکھنا مشکل نظر آرہا ہے۔

شیئر: