یوم چہل قدمی:سعودی عرب میں آگہی مہم کا آغاز

چہل قدمی میں طلباء و طالبات اور اساتذہ کو شریک کیاجائے گا (فوٹو ٹوئٹر)
سعودی وزارت صحت 11جنوری 2020ء کو مملکت بھر میں چہل قدمی کے رواج کے لیے آگہی مہم شروع کرے گی۔ اس کا عنوان ’امش30‘ ( 30منٹ چہل قدمی کریں) ہوگا۔
سعودی خبررساں ادارے ایس پی اے کے مطابق وزارت صحت اس مہم کے ذریعے پورے ملک میں چہل قدمی کا کلچر عام کرنا ، صحت عامہ کا نظام بہتر بنانا ، چہل قدمی کرنے والوں کی تعداد بڑھانا اور لاعلاج امراض میں مبتلا پانچ لاکھ سے زیادہ افراد کی مدد کرنا چاہتی ہے۔
اس مہم میں سکولوں ، کالجوں اور یونیورسٹیوں کے طلباء و طالبات اوراساتذہ کو شریک کیاجائے گا۔ وزارت صحت چہل قدمی کرنےوالوں کو یہ بتانے، سمجھانے اور احساس دلانے کے لیے کہ وہ کتنا پیدل چلے ہیں۔

اس عادت کو بڑھانے کے لیے مزید رواج دیا جائے گا (فوٹو ٹوئٹر)

انہوں نے چہل قدمی میں کتنے قدم رکھے ہیں۔ اس کی باقاعدہ گنتی کا بھی اہتمام کرے گی۔ گنتی کی ایپ تیار کرلی گئی ہے۔ ترقی یافتہ ممالک میں یہ پہلے سے رائج ہے اور جیب میں موجود موبائل کے ذریعے قدم گنتی ہے ،سعودی عرب میں بھی اسے مزید رواج دے کر عام کیا جائے گا۔
5 مارچ 2020ء کو سعودی عرب کے تمام علاقوں میں چہل قدمی کا قومی دن منایا جائے گا۔ اسے ’السعودیہ تمشی‘ (سعودی عرب چہل قدمی کررہا ہے) کا عنوان دیا گیا ہے۔

تمام علاقوں میں چہل قدمی کا قومی دن منایا جائے گا۔ (فوٹو ٹوئٹر)

 اس مہم کے پہلو بہ پہلو متعدد پروگرام ہوں گے۔ کئی ادارے شریک ہوں گے۔ یہ پروگرام شہروں، کمشنریوں اور قصبوں میں ہوں گے۔ 4 ماہ تک جاری رہیں گے۔ ان میں نمایاں ترین پروگرام چہل قدمی کے چیلنج کا مقابلہ ہے۔ 
یہ مقابلہ اس بنیاد پر ہوگا کہ روزانہ کون کتنی چہل قدمی کررہا ہے۔ اسکی گنتی ظاہر ہے کہ چہل قدمی کرنے والے کے ’اسٹیپ‘ کی تعداد کی بنیاد پر ہوگی۔ کم از کم روزانہ 8 ہزار اسٹیپ والے ہی اس مقابلے میں شریک ہوں گے۔ انعام یافتگان کا انتخاب ماہانہ بنیاد پر ہوگا۔

8 ہزار قدم یومیہ چہل قدمی کرنے والوں کو انعام دیا جائے گا (فوٹو ٹوئٹر)

اس کی بدولت لوگوں میں چہل قدمی کی عادت پیدا ہوگی۔ ہر ماہ پچاس افراد کے انتخاب کے لیے قرعہ اندازی ہوگی۔ قرعہ اندازی میں وہی لوگ شامل ہوں گے جنہوں نے روزانہ کم از کم 8 ہزار یا اس سے زیادہ قدم چہل قدمی میں استعمال کیے ہوں گے۔

شیئر: