Sorry, you need to enable JavaScript to visit this website.

ڈاکٹر ’حیاۃ سندی‘ دوبارہ یونیسکو کی خیرسگالی سفیر متعین

سائنسی تحقیقی میدان میں ڈاکٹر حیاۃ کی خدمات مثالی ہیں(فوٹو،سوشل میڈیا)
اقوام متحدہ کے تحت ’یونیسکو‘ کی تعلیمی ،سائنسی اور ثقافتی کمیٹی نے ’خیرسگالی سفیر‘ کے طور پر سعودی ڈاکٹر ’حیاۃ سندی‘ کی خدمات میں مزید 2 برس کی توسیع کردی ہے۔
ویب نیوز ’سبق‘ نے یونیسکو کی ڈائریکٹر ’آڈری ازولے‘ کے حوالے سے کہا ہےکہ ’ڈاکٹرسندی کے مثالی کاموں کی وجہ سے انہیں مزید 2 برس کےلیے خیرسگالی ایمبیسڈر کے طور پرمتعین کیا جاتا ہے ، ڈاکٹر سندی نے نوجوانوں میں سائنسی ایجادات کے حوالے سے مشرق وسطی میں مثالی خدمات انجام دیں‘

ڈاکٹر حیاۃ  ان اولین خواتین میں ہیں جنہیں مجلس شوری میں رکنیت دی گئی(فوٹو، ٹوئٹر)

ڈائریکٹر یونیسکو نے اس حوالے سے مزید کہا ’ڈاکٹر حیاۃ سندی ہمیشہ کمیٹی کے اہداف کو مدنظر رکھتے ہوئے سائنس و ٹیکنالوجی ، ریاضیات اور انجینیئرنگ کے میدان میں نمایاں خدمات انجام دیں ہیں ، وہ خلیج کی سطح پر پہلی خاتون ہیں جنہوں نے کیمبرج یونیورسٹی سے  بائیو ٹیکنالوجی  میں ڈاکٹریٹ کی ‘۔
واضح رہے ڈاکٹر حیاۃ سندی کا شمار ان اولین خواتین میں ہوتا ہے جنہیں سعودی شوری کونسل میں رکن کے طور میں منتخب کیا گیا ، وہ بائیوٹیکنالوجی کے شعبے سے تعلق رکھتی ہیں۔
مکہ مکرمہ میں پیدا ہونے والی ڈاکٹر ’حیاۃ سندی‘ نے ہاورڈ یونیورسٹی سے اپنی ریسرچ مکمل کی اور ’تشخیص ‘ کے شعبے میں ایسا طریقہ ایجاد کیا جو انتہائی ارزاں تھا جس سے غریب ممالک کے لاکھوں افراد کا علاج کرنا ممکن ہوا۔  

شیئر: