’ووٹ کو عزت سے ووٹ کو ایکسٹینشن تک‘

’ووٹ کو عزت دو‘ مسلم لیگ ن کا انتخابی نعرہ رہا ہے۔ فوٹو: اے ایف پی
قومی اسمبلی سے آرمی چیف اور دیگر سروسز چیفس کی مدت ملازمت میں توسیع کے بلز کی چند منٹوں میں منظوری کے بعد اسمبلی میں تو کوئی گرما گرمی دیکھنے کو نہ ملی مگر پاکستانی صارفین نے سوشل میڈیا کا محاذ خوب گرما رکھا ہے۔
بل کی ایوان سے منظوری کے بعد ٹوئٹر پر اپوزیشن جماعتیں شدید تنقید اور طنزومزاح کا نشانہ بن رہی ہیں اور مسلم لیگ نواز کا انتخابی نعرہ: ’ووٹ کی عزت‘ ٹاپ ٹرینڈز میں شامل ہے تاہم سوشل میڈیا صارفین نے نعرے کے ساتھ ہاہاہا کا اضافہ کر دیا ہے۔
سوشل میڈیا کا ٹاپ ٹرینڈ آرمی ایکٹ ہے جبکہ دوسرے نمبر پر ’ووٹ کی عزت ہاہاہا‘ ہے۔ دونوں ٹرینڈز میں پاکستانی صارفین اپنی روایتی حس مزاح کا مظاہرہ کرتے ہوئے مختلف میمز اور فلموں کے ڈائیلاگ کے ساتھ دلچسپ تبصرے بھی کر رہے ہیں۔
خرم عباسی نامی ٹوئٹر صارف نے لکھا کہ آج پارلیمنٹ میں جمہوریت کا قتل کر دیا گیا ہے۔
تمام سیاسی جماعتیں خصوصاً مسلم لیگ ن اور پارٹی کی رہنما مریم نواز سوشل میڈیا صارفین کے نشانے پر ہیں۔
 
دوسری طرف پی ٹی ایم اور جے یو آئی ایف کے واک آؤٹ کے حوالے سے ٹوئٹر پر ’مولانا ڈٹ گئے باقی دب گئے‘ کا ٹرینڈ بھی چل رہا ہے۔ 
رفیع اللہ حسن نے جے یو آئی ف کے فیصلے کو سراہتے ہوئے لکھا کہ مولانا فضل الرحمان دو سو سال سے  مزاحمتی سیاست کے قائل ہیں لیکن پیپلز پارٹی  اور مسلم ن لیگ نے کیا کیا۔
ثنا ساحر کا کہنا تھا کہ کیا آپ دیکھ نہیں سکتے کہ کیسے سیاست لوگوں کو بے نقاب کرتی ہے۔
اگر مجموعی طور پر بات کی جائے تو زیادہ ترسوشل میڈیا صارفین بلیک ڈے اور سیاسی جماعتوں کا بائیکاٹ جیسے ٹرینڈز  پر  بات کر رہے ہیں۔

شیئر: