دبئی: شہری نے شادی کے لیے جمع کی ہوئی رقم 'ڈبل شاہ' کو دے دی

اماراتی شہری نے اپنی شادی کے لیے جمع شدہ رقم جعل ساز کے حوالے کر دی۔ (فوٹو: ای ایف پی)
پاکستان کے بعد دبئی میں بھی ایک 'ڈبل شاہ' گرفتار ہوا ہے جس نے ایک اماراتی شہری سے محض دو گھنٹوں میں رقم ڈبل کرنے کا کہہ کر ایک لاکھ 20 ہزار درہم ہتھیا لیے تھے۔ 
امارات ٹوڈے اخبار نے پولیس کے حوالے سے بتایا کہ دبئی میں ایک اماراتی شہری نے انٹرنیٹ پر ایک اشتہار دیکھا جس میں یہ دعویٰ کیا گیا تھا کہ 'انتہائی منافع بخش کاروبار کا سنہری موقع ہاتھ سے نہ جانے دیں، محض دو گھنٹوں میں اپنا سرمایہ ڈبل کریں۔'
اشتہار دیکھ کر ایک اماراتی شہری نے دیے گئے نمبروں پر رابطہ کیا تو دوسری جانب سے ایک عرب ملک سے تعلق رکھنے والے شخص نے انہیں فرضی کارروبار کے بارے میں بتاتے ہوئے کہا کہ اس کے کفیل کی آئل فیلڈ ہے جسے وہ بعض مجبوریوں کے باعث فروخت کرنا چاہتا ہے۔
جعل ساز نے اپنے شکار کو گھیرنے کے لیے انہیں دبئی کے ایک بڑے کیفے میں مدعو بھی کیا اور جب وہ وہاں پہنچے تو ان کی ملاقات ایک اور شخص سے کرائی گئی جس نے فرضی کمپنی کا لائسنس دکھا کر انہیں اس بات پر قائل کر لیا کہ اگر وہ کمپنی کے ذمے ایک لاکھ 20 ہزار درہم جرمانہ ادا کر دیں تو آئل کمپنی کے مالک بن جائیں گے۔

دبئی کی عدالت نے غیر ملکی جعل ساز کو ایک سال قید کے ساتھ ملک بدری کے احکامات جاری کیے ہیں۔

اماراتی شہری کا کہنا تھا کہ انہوں نے اپنی شادی کے لیے جمع شدہ رقم اس جعل ساز کے حوالے کر دی جس نے انہیں جعلی سند بنا کر دی اور فرضی کمپنی کا لائسنس منتقل کرانے کا کہہ کر نکل گیا۔ 
 انہوں ںے کافی دیر بعد وٹس ایپ پر اسے پیغام بھیجا مگر یہ دیکھ کر حیران رہ گئے کہ جعل ساز نے ان کے نمبر کو بلاک کر رکھا تھا جس پر انہوں نے فوری طور پر پولیس سے رابطہ کیا۔
پولیس نے شکایت درج ہونے پر انتہائی مختصر وقت میں ملزم کو گرفتار کر لیا جبکہ اس کا ساتھی روپوش ہو گیا۔
ملزم کو عدالت میں جرم ثابت ہونے پر ایک برس قید اور ملک بدری کی سزا سنائی گئی جبکہ اس کے دوسرے ساتھی کو مفرور قرار دے کر گرفتاری کے احکامات جاری کر دیے گئے۔
پولیس کا کہنا ہے کہ لوگ انٹرنیٹ پر اس قسم کے فراڈ سے ہوشیار رہیں۔ ایسے دھوکے بازوں کے چنگل میں نہ پھنسیں جو انہیں گھر بیٹھے منافع کما کر دینے اور مختصر وقت میں لکھ پتی بنانے کے دعوے کرتے ہیں۔

شیئر: