’شادی تو کرنی ہے، انڈیا میں ہو یا پاکستان میں‘

اگر یہ شادی ہوتی ہے تو یہ انڈیا پاکستان کے درمیان چوتھی بڑی شادی ہوگی۔ فوٹو: اے ایف پی
انڈین میڈیا میں یہ بات گردش کر رہی ہے کہ پاکستانی کرکٹر حسن علی بھی ظہیر عباس، محسن حسن خان اور شعیب ملک کی راہ پر گامزن ہیں۔
حسن علی کو ایک انڈین لڑکی پسند آ گئی ہے جس کا نام شامیہ آرزو بتایا جا رہا ہے۔ 
اس پر حسن علی نے اسلام آباد سے اردو نیوز کے نامہ نگار زبیر علی خان کے رابطہ کرنے پر اس بات کی تصدیق کہ انڈین لڑکی کے ساتھ ان کی شادی کا معاملہ زیر غور ہے۔ انہوں نے مزید بتایا کہ فی الحال انہیں دونوں خاندانوں کی جانب سے حتمی رضامندی کا انتظار ہے۔ 
لاہور سے اردو نیوز کے نامہ نگار رائے شاہنواز کے مطابق حسن علی کے انتہائی قریبی دوست اور کرکٹ کوچ عطاالرحمان وڑائچ نے تصدیق کی ہے کہ حسن علی کا نکاح آئندہ ماہ کی 20 تاریخ کو دبئی میں ہو گا۔ انہوں نے اس حوالے سے مزید معلومات دینے سے معذرت کر لی ہے۔

حسن علی 9 ٹیسٹ، 53 ایک روزہ اور 30 ٹی ٹوئنٹی میچوں میں پاکستان کی نمائندگی کر چکے ہیں، تصویر: اے ایف پی

حسن علی ویسے تو تعارف کے محتاج نہیں لیکن ان کی ہونے والی دلہن اگر انڈیا سے ہوں تو اس میں کرکٹ شائقین کو دلچسپی ضرور ہو گی۔
اںڈیا کے سرکاری خبر رساں ادارے پریس ٹرسٹ آف انڈیا (پی ٹی آئی) نے مقامی میڈیا کے حوالے سے بتایا ہے کہ دونوں کی ملاقات ایک مشترکہ دوست کے ذریعے دبئی میں ہوئی۔
جبکہ انڈیا کے مشہور ہندی اخبار دینک جاگرن نے لکھا ہے کہ شامیہ دہلی کے نواح میں ہریانہ ریاست میں میوات کے علاقے نوح کے چندولی گاؤں کی رہنے والی ہیں۔

حسن علی نے ورلڈ کپ میں پاکستان کی نمائندگی کی اور چار میچوں میں حصہ لیا، تصویر: اے ایف پی

شامیہ کے والد اور سابق بی ڈی پی او لیاقت علی نے روزنامہ امر اجالا کو بتایا کہ ان کی بیٹٰی کی شادی 20 اگست کو ہو گی۔ 17 اگست کو ان کے گھرانے کے 10 افراد دبئی جا رہے ہیں جن میں شامیہ کے علاوہ، بیٹا اکبر علی، بیوی رئیسہ، داماد الطاف حسین، بیٹی بلقیس، بھائي انیس علی، بیٹی ممتاز اور کشور جہاں شامل ہیں۔
انہوں نے کہا کہ بیٹی کی شادی تو کرنی ہے چاہے انڈیا میں ہو یا پھر پاکستان میں، اس سے کوئی فرق نہیں پڑتا۔ ان کا کہنا تھا کہ تقسیم کے وقت ان کے رشتہ داروں سمیت بڑی تعداد میں لوگ پاکستان چلے گئے تھے، آج بھی ان سے باتیں ہوتی رہتی ہیں۔ 
پی ٹی آئی کے مطابق شامیہ آرزو نے انگلینڈ سے انجینیئرنگ کی ہے جبکہ ہندی روزنامہ امر اجالا کے مطابق انھوں نے دہلی سے ملحق ہریانہ کے شہر فرید آباد کی مانو رچنا یونیورسٹی سے ایروناٹیکل انجینیئرنگ میں بی ٹیک کی ڈگری حاصل کی۔ پہلے جیٹ ایئرویز میں ملازمت کی اور گذشتہ تین سال سے وہ امارات ایئرلائنز کے ساتھ وابستہ ہیں اور فلائٹ انجینیئر ہیں۔
نوح کے علاقے میں کئی گھرانوں کی شادی پاکستان میں ہوئی ہے لیکن یہ شادی اس لیے سرخیاں حاصل کرنے والی ہے کیونکہ یہ ایک ہائی پروفائل شادی ثابت ہو گی۔
لیاقت علی نے مزید بتایا کہ 'ہندوستان کی تقسیم کے وقت پاکستان کے سابق پارلیمان اور پاکستان ریلوے بورڈ کے چیئرمین سردار طفیل عرف خان بہادر اور میرے دادا سگے بھائی تھے۔ ان کا خاندان فی الحال ضلع قصور کی کچی کوٹھی نائیکی میں رہتا ہے۔ ان کے ذریعے ہی شامیہ کا رشتہ طے ہوا ہے۔

پاکستانی کرکٹرز کی انڈیا میں شادیاں

اگر یہ شادی ہوتی ہے تو یہ انڈیا پاکستان کے درمیان کسی کرکٹر کی چوتھی بڑی شادی ہو گی۔ پہلی شادی ظہیر عباس نے ثمینہ عباس سے کی، جبکہ دوسری محسن خان کی اداکارہ رینا رائے سے ہوئی تھی۔ شعیب ملک کی انڈیا کی ٹینس سٹار ثانیہ مرزا سے تیسری شادی ہوئی اور اب باری حسن علی اور شامیہ آرزو کی ہے۔

شعیب ملک اور ثانیہ مرزا کی شادی 12 اپریل 2010 کو لاہور میں ہوئی، تصویر: اے ایف پی

حسن علی نے انگلینڈ میں کھیلے گئے ورلڈ کپ میں پاکستان کی نمائندگی کی اور چار میچوں میں حصہ لیا۔ انھوں نے نو ٹیسٹ، 53 ون ڈے انٹرنیشنل اور 30 ٹی ٹوئنٹی میچز میں پاکستان کی نمائندگی کی ہے۔
حسن علی نے گذشتہ برس لاہور میں پاکستان اور انڈیا کے درمیان واہگہ بارڈر پر پرچم اتارنے کی تقریب میں شرکت کی۔ اس موقع پر انہوں نے وکٹ حاصل کرنے کے بعد خوشی منانے کا روایتی انداز بھی اپنایا۔ ان کے اس انداز کو جہاں کرکٹ شائقین اور لوگوں نے پسند کیا وہیں سوشل میڈیا پر خاص طور پر انڈیا میں لوگوں نے اس پر ناپسندگی کا بھی اظہار کیا۔ ناقدین کا کہنا تھا کہ واہگہ سرحد پر حسن علی کو اس طرح جوش دکھانے کی ضرورت نہیں تھی۔
انڈین ریاست ہریانہ کی شامیہ آرزو اور حسن علی کی شادی کی خبروں پر پاکستانی اور انڈین کرکٹ شائقین کے سوشل میڈیا پرتبصرے بھی جاری ہیں۔ دونوں جانب سے حسن علی اور شامیہ آرزو کے لیے نیک خواہشات کا اظہار کیا جا رہا ہے۔
انڈین ٹوئٹر ہینڈل نونیت مندھرا نے شادی کی خبر شیئر کرتے ہوئے لکھا کہ حسن علی، شعیب ملک، محسن خان اور ظہیر عباس کے بعد انڈیا سے شادی کرنے والے چوتھے پاکستانی کرکٹر ہوں گے۔
مشکل لگتا ہے کہ سوشل میڈیا کسی بات کا ذکر کرے اور اس میں شرارت یا طنزیہ انداز نہ ہو، یہاں بھی کچھ ایسا ہی ہوا جب ٹوئٹر ہینڈلز نے حسن علی کے نئے رشتے کا ’لیول‘ تلاش کرنا چاہا۔ مریم نامی ہینڈل نے لکھا کہ ’حسن علی امارات میں کام کرنے والی ایک فلائٹ انجینیئر سے شادی کر رہے ہیں، مطلب لیول‘۔
سماجی رابطوں کے صارفین نئے رشتے کی اطلاع سامنے آنے کے بعد شامیہ آرزو سے متعلق زیادہ سے زیادہ تفصیل جاننے کے خواہاں دکھائی دیے۔ ہریانہ سے تعلق، اہل خانہ سمیت دبئی میں سکونت، امارات ایئر لائن کی ملازمت، برطانیہ سے تعلیم اور خاندان کے کچھ لوگوں کے دہلی میں مقیم ہونے کی اطلاعات بھی حسن علی کی شادی میں دلچسپی رکھنے والوں کی ٹائم لائنز پر گردش کر رہی ہیں۔
سوشل میڈیا پر کچھ ہینڈلز نے تنقید نما تجاویز میں کہا کہ حسن علی پاکستان سے ہی شادی کر لیتے، تاہم صارفین کی خاصی تعداد ان کے فیصلہ کی حامی اور ناقدین سے نالاں دکھائی دی۔ نور نامی ٹوئٹر ہینڈل نے شامیہ کو اپنی قوم میں خوش آمدید کہتے ہوئے لکھا کہ حسن علی اگر انڈین پنجاب کی ایک لڑکی سے شادی کر رہے ہیں تو اس سے آپ لوگوں کو کیا مسئلہ ہے؟
20 اگست کو شامیہ اور حسن علی کے نکاح کی خبر سامنے آتے ہی سرچ انجن پر بھی دونوں سے متعلق زیادہ سے زیادہ جاننے کے خواہش مند فعال نظر آئے۔ گوگل سرچ کی خودکار تجاویز میں کم از کم دس سرچز شامیہ آرزو سے متعلق ہیں۔ سرچ انجن پر شامیہ آرزو کے ٹوئٹر، انسٹاگرام اکاؤنٹس کی تلاش کے علاوہ، ان کی ملازمت، تصاویر اور پروفیشل زندگی سے متعلق جاننے کی کوشش کی جاتی رہی۔

شیئر: