نوازشریف، کسی کا سوال کسی کی دعا

محمد حفیظ نے لکھا ہے نواز شریف کو اجازت ملنا ’بہت اچھی خبر‘ ہے۔ فوٹو: ٹوئٹر
سابق وزیراعظم نواز شریف کو علاج کے لیے ملک سے باہر جانے کی عدالتی اجازت کے بطد پاکستان کے سوشل میڈیا صارفین نے ملے جلے ردعمل کا اظہار کیا تاہم اس دوران پاکستانی کرکٹرز کے ٹویٹس نے نئی بحث کو جنم دیا ہے۔
ٹوئٹر پر سابق وزیراعظم کے علاج کے لیے بیرون ملک جانے پر سوال اٹھانے پر جہاں ایک طرف ٹیسٹ کرکٹر محمد حفیظ کو تنقید کا سامنا ہے تو دوسری جانب نواز شریف کی صحت کے لیے دعا کرنے پر سابق بیٹسمین محمد یوسف کی تعریف بھی کی جا رہی ہے۔
محمد حفیظ نے لاہور ہائی کورٹ کے سابق وزیراعظم کو بیرون ملک جانے کی اجازت دینے پر ٹویٹ کرتے ہوئے لکھا ہے کہ ’یہ بہت اچھی خبر‘ ہے۔  
’ایک اعلیٰ طبی پینل نے فیصلہ کیا ہے کہ انہیں (نواز شریف) باہر جانے کی ضرورت ہے، تو ہماری عدلیہ نے یہ مان لیا ہے کہ پاکستان میں طبی سہولیات کی کمی ہے؟ اس کا مطلب ہے ہم 20 کروڑ پاکستانی یہاں محفوظ نہیں ہیں؟ صرف پوچھ رہا ہوں۔‘

 سوشل میڈیا پر محمد حفیظ کو اس بیان پر شدید تنقید کا سامنا ہے۔ بعض صارفین نے ٹیسٹ کرکٹر کو یاد دلایا کہ انہوں نے خود بھی اپنا علاج بھی برطانیہ میں کروایا تھا۔ کئی صارفین نے ان کی اہلیہ کی وہ ٹویٹ بھی شیئر کی جس میں وہ محمد حفیظ کے ساتھ ہسپتال میں ہیں۔
محمد حفیظ نے رواں سال کے اوائل میں اپنے انگوٹھے کا آپریشن برطانیہ میں کروایا تھا۔
محمد حفیظ کے اس ٹویٹ پر سابق وزیر اور پاکستان مسلم لیگ نواز کے رہنما احسن اقبال نے ردعمل ظاہر کیا۔
احسن اقبال نے لکھا ہے ’پروفیسر صاحب آپ ایک پڑھے لکھے آدمی ہیں۔ پاکستان اب تک ان ممالک میں شامل نہیں ہوا ہے جہاں ٹیکنالوجی کی اعلیٰ سہولیات ہوں۔ برطانیہ تک میں وہ سہولیات نہیں ہیں جو امریکہ میں ہیں اور برطانیہ کے بہت سے مریض علاج کے لیے امریکہ جاتے ہیں۔ کیا اس کا یہ مطلب ہے کہ برطانیہ ناکام ہوگیا ہے؟ ہمیں صحت سے متعلق مسائل کو سیاسی نہیں بنانا چاہیے۔ ‘
سابق وزیراعظم کو بیرون ملک علاج کی اجازت دیے جانے پر وفاقی وزیر برائے سائنس اور ٹیکنالوجی فواد چودھری کا بیان بھی سامنے آیا، جس میں انہوں نے کہا ہے کہ حکومت کو لاہور ہائی کورٹ کے فیصلے کو سپریم کورٹ میں چیلنج کرنا چاہیے۔
دوسری جانب سابق کرکٹر محمد یوسف نے سابق وزیراعظم کی صحت کے لیے دعا کرتے ہوئے ٹویٹ کیا ہے کہ ’میاں صاحب کی تشویشناک حالت کو دیکھتے ہوئے عدالت کی طرف سے ان کو باہر علاج کی اجازت دینا اچھا فیصلہ ہے کیونکہ علاج انسان کا بنیادی حق ہے وہ جہاں سے بھی کرانا چاہے۔‘
قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف شہباز شریف نے اپنی ٹویٹ میں محمد یوسف کا شکریہ ادا کریا۔
واضح رہے کہ سابق نواز شریف، جن کے خلاف مقدمات چل رہے ہیں، نے علاج کے لیے ملک سے باہر جانے کی اجازت مانگی تھی۔
پاکستان تحریکِ انصاف کی حکومت نے انہیں اجازت دیتے ہوئے شرائط عائد کی تھیں، جن میں سات ارب روپے انڈیمنٹی بانڈ جمع کروانے اور محدود مدت تک ملک سے باہر رہنے کی شرط شامل تھی۔
تاہم سنیچر کو لاہور ہائی کورٹ نے نواز شریف کے وکیل اور شہباز شریف کی جانب سے نواز شریف کی واپسی کا بیان حلفی جمع کروائے جانے کے بعد فیصلہ سناتے ہوئے نواز شریف کو بغیر کسی شرط کے بیرون ملک علاج کی اجازت دی تھی۔
عدالت نے حکومت کے وکیل سے کہا کہ اگر نواز شریف کو ملک سے باہر جانے کی اجازت انسانی بنیادوں پر دی جا رہی ہے تو اس میں شرائط نہیں ہونے چاہئیں۔

شیئر: