ٹوئٹر نے ڈیٹا لیک ہونے پر معافی مانگ لی

ٹوئٹر کے مطابق صارفین کے فون نمبر اور ای میل ایڈریس نادانستہ طور پر استعمال ہوئے۔ فوٹو: اے ایف پی
سوشل میڈیا سائٹ ٹوئٹر نے اشتہارات کے لیے صارفین کا ڈیٹا استعمال کیے جانے پر معافی مانگی ہے۔
سماجی رابطے کی ویب سائٹ نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ صارفین کے فون نمبر اور ای میل ایڈریس نادانستہ طور پر استعمال ہوئے ہیں۔
یاد رہے ٹوئٹر پر اکاؤنٹ کی تصدیق کے لیے صارفین اپنا فون نمبر اور ای میل ایڈریس فراہم کرتے ہیں بیان کے مطابق صارفین کا یہ ڈیٹا مخصوص اہداف (ٹیلرڈ آڈئینس اور پارٹنر آئیڈینس اشتہارت) کے نظام ذریعے استعمال ہوا ہے۔
ٹوئٹر کے مطابق ٹیلرڈ آڈئینس فیچر کے ذریعے ایڈورٹائزر، مارکیٹینگ لسٹ کے مطابق اپنی پروڈکٹ صارفین تک پہنچاتا ہے جبکہ پارٹنر آئیڈینس فیچر بھی  ٹیلرڈ آڈئینس فیچر کا استعمال کرتے ہیں اور تھرڈ پارٹی کی جانب سے فراہم کیے گئے اشتہارات صارفین تک پہنچاتے ہیں۔

گذشتہ چند مہینوں سے سماجی رابطوں کی ویب سائٹس نگرانی کرنے والے اداروں کی نظر میں ہیں۔ (فوٹو:اے ایف پی)

ٹوئٹر کے بیان مین کہا گیا ہے ’ہمیں حال ہی میں معلوم ہوا ہے کہ اکاؤنٹ کی سکیورٹی کے لیے فراہم کیے گئے کچھ ای میل اڈریس اور فون نمبرز کو غیر ارادی طور پر استعمال کیا گیا ہے۔‘
بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ ٹوئٹر کی جانب سے کسی کی ذاتی معلومات کمپنی سے باہر کسی بھی پارٹی یا پارٹنر کے ساتھ شئیر نہیں ہوئے۔
’ہم چاہتے ہیں کہ ٹوئٹر صارفین اس صورتحال سے آگاہ ہوں، گذشتہ 17 ستمبر تک اس مسئلے کو حل کر لیا گیا ہے۔‘  
ٹوئٹر کے بیان میں کہا گیا ہے کہ ’کمپنی معذرت خواہ ہے کہ ایسا ہوا، ہم ایسی غلطی دوبارہ نہ دہرانے کے لیے اقدامات لے رہے ہیں۔‘
واضح رہے فیس بک اور ٹوئٹر پر نظر رکھنے والے اداروں کی وجہ سے  پرائیویسی اور انٹرنیٹ ڈیٹا دنیا بھر میں اہم موضوعات ہیں۔

شیئر: